دماغ (Brain) انسانی جسم کا سب سے اہم ترین حصہ ہے۔ انسان کی ذہانت، شخصیت، فہم وفراست، علم حاصل کرنے کی صلاحیت، شعور، جذبات، حتی کہ پورے جسم کے اعضاء کےبہترین کردار کا دارومدار دماغ پر ہوتا ہے۔ یہ ہمارہ دماغ ہی ہے جو ہمارے جسم کے کسی بھی عضو میں ہونے والی تکلیف کے بارے میں ہمیں آگاہ کرتا ہے۔ اور ہم متعلقہ ڈاکٹر سے اس تکلیف یا بیماری کا علاج کرواتے ہیں۔ لیکن اگر ہمارے دماغ (Brain) کے اپنے ہی کسی نظام میں کوئی رکاوٹ آجائے تو سوچئے کیا ہو گا؟ ایسی صورت میں ہمارے دماغ (Brain)کے لیے جسم کے دوسرے اعضاء کا خیال رکھنا تو دور کی بات، اس کے لیے اپنے ہی نظام کو ٹھیک سے چلانا مشکل ہو جائے گا۔ اس کی مثال ایسے ہی ہے جیسے پاؤں میں پہنا ہوا جوتا کاٹ رہا ہو تو انسان زیادہ دور تک نہیں چل پاتا۔ اسی طرح اگر ہمارے دماغ میں موجود بہت سے نظاموں میں سے کسی ایک میں بھی کوئی خرابی آجائے تو ہمارے دماغ کی کار کردگی بھی کچھ زیادہ دیر تک برقرار نہیں رہ پائے گی۔ تو پھر جس طرح ہم اپنے دل یا گردوں میں خرابی ہونے پر متعلقہ ڈاکڑوں سے علاج کرواتے ہیں اسی طرح کوئی شرم محسوس کئے بغیر، دماغ (Brain) کے مسائل کو حل کرنے کے لئے بھی ہمیں ڈاکڑ سے رابطہ کرنا چاہئے۔ سیلف ایویلوایشن کے لیے اس ویب سائٹ پر دماغ سے متعلق کچھ فری اسیسمنٹ ٹیسٹ دئیے گئے ہیں۔ جن میں ڈپریشن ٹیسٹ، اینگزائٹی ٹیسٹ، آئی کیو ٹیسٹ اور شخصیت جاننے کا ٹیسٹ شامل ہیں۔

انسانی دماغ اور اس کے افعال

Brain picture from side. Showing the parts of brain with their names.
دماغ کی ساخت اور اس کے افعال

Click here to see the 3D structure of human brain

دماغ (Brain)کا اوپری حصہ Forbrain

یہ انسانی دماغ کا سب سے بڑا حصہ ہوتا ہےجسے سیری برم بھی کیا جاتا ہے۔ یہ حصہ اونچے درجے کے کام مثلاً سوچ بچار کرنے اور اس پر عمل درآمد کرانے کے کام کرتا ہے۔ اوپری سطح کے نیچے سفید عصبی ریشے دماغ اور جسم کے دوسرے حصوں میں عصبی خلیوں کے مابین سگنل لے جاتے ہیں۔ اس باہر والے دماغ کو چار حصوں میں تقسیم کیاجاتا ہے۔

فرنٹل لوب Frontal Lobe

دماغ کا یہ حصہ ہمارے ماتھے میں موجود ہوتا ہے۔ دلائل دینے، ترتیب دینے، منصوبہ بنانے، بولنے، حرکت کرنے، چہرے کے تاثرات کو بدلنے، مسائل کو حل کرنے، بے ساختہ جواب دینے، خود کو منظم رکھنے، اپنےطرز عمل کو کنٹرول کرنے، توجہ کرنے، چیزوں کو یاد رکھنیں اور جذبات پر قابو رکھنیں کا دارومدار اسی حصہ پر ہوتا ہے۔

پرائٹل لوب Parietal Lobe

پرا ئٹل لوب ہمارے دماغ (Brain) کے اوپری عقب میں واقع ہے۔ یہ حصہ جسم میں موجود مختلف حسیات کے آپس میں رابطے اور معلومات کے تبالے کا کام کرتا ہے۔ جس میں دیکھنا، چھونا، سونگھنا، جسمانی حالت سے واقف رہنا، اردگرد کے ماحول سےواقفیت رکھنا وغیرہ شامل ہیں۔ اس کے علاوہ یہ حصہ زبان کی سمجھ، تعمیری قابلیت، جسم کی پوزیشن اور اس کی نقل و حرکت، دائیں اور بائیں میں فرق اور خود آگاہی کے فرائض بھی سرانجام دیتا ہے۔

اوکسیپیٹل لوب Occipital Lobe

  یہ لوب ہمارے دماغ (Brain)کے پچھلے حصے پر واقع ہے اور ہمارے بصری نظام کی مدد کرتی ہے۔  ہماری آنکھوں کے ذریعے جو عکس ہمارے ذہن میں پہنچتا ہے، یہ حصہ اس کی تشریح کرکے ہمیں اس عکس کو سمجھنے میں مدد دیتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ حصہ نظر کو مرکوز کرتا ہے اورہمارے اردگرد متحرک چیزوں، جسمانی حرکت، دوسروں کے چہروں کے تاثرات، یا اشاروں کے معنی سمجھنے میں مدد دیتا ہے۔ 

ٹمپرل لوب Temporal Lobe

یہ حصہ ہمارے کانوں کے قریب واقع ہے، اور ہمارے خیال اور سماعت کی مدد کرتا ہے، اور ہمیں اس قابل بناتا ہے کہ ہم بہت سی آوازوں میں سے کسی ایک آواز پر توجہ مرکوز کرسکیں۔ یہ آواز کی پہچان کرنے میں بھی ہماری مدد کرتا ہے۔ جیسے کہ مجمعے میں بہت سے لوگوں کی آوازوں میں سے کسی ایک آدمی کی آواز کو پہنچاننا۔ اس کے علاوہ یہ حصہ زبان کو سمجھنے، دیکھے گئے عکس کو یاد رکھنے اور گفتگو کی روانگی کے لیے مناسب الفاظ کی تلاش کرنے کا کام بھی سرانجام دیتا ہے۔

Brain picture from top. Shows right and left brain as well as their functions.

دماغ کی تصویر میں آپ نے دیکھا ہو گا کہ ہمارے دماغ (Brain) کے درمیان میں ایک لمبی سی کھائی ہے۔ جس کی وجہ سے ہمارہ دماغ دو حصوں میں تقسیم ہوا ہوتا ہے۔ ہمارے دماغ کے دائیں حصے کو تخلیقی یا مثبت سائیڈ سمجھا جاتا ہے۔ اور بائیں حصے کو منتقی یا منفی سائیڈ سمجھا جاتا ہے۔ مگر اس منفی سائیڈ کا یہ مطلب نہیں کے دماغ کی بائیں سائیڈ کوئی بری چیز ہے۔ جی نہیں بلکہ یہی سائیڈ ہمیں نقصانات یا پرشانیوں سے بچنے میں مدد کرتی ہے۔

(Brain)وسطی دماغ Midbrain

وسطی دماغ، اوپری دماغ (Brain) کے پیچھے، نیچے والی جگہ پر واقع ہوتا ہے۔ وسطی دماغ ہمارے دماغ کا مرکزی حصہ ہوتا ہے۔ مڈبرین کا بنیادی کردار ہمارے دیکھنے اور سننے کے نظاموں کے لئے ایک طرح سے ریلے اسٹیشن کی حیثیت سے کام کرنا ہے۔ تاکہ ان نظاموں کا کردار دماغ کے ایک حصے سے دوسرے حصے تک عمل میں آسکے۔ وسطی دماغ کے دو حصے ریڈ نیوکلئس اور سبسٹینیا نگرا، جسم کی نقل و حرکت کو قابو میں رکھتے ہیں، اور ان میں بڑی تعداد میں ڈوپامین تیار کرنے والے نیوران پائے جاتے ہیں۔ ڈوپامین انتہائی اہم مادہ ہے کیونکہ ہمیں خوشی محسوس کروانے میں یہ اہم کردار ادا کرتا ہے۔ اس کے علاوہ ڈوپامین ہمارے سوچنے اور منصوبہ بنانے کی صلاحیت کا ایک بہت بڑا حصہ ہے۔ یہ ہمیں جدوجہد کرنے، توجہ دینے اور مختلف چیزوں میں دلچسپی لینے کو ابھارتا ہے۔ اگر یہ تمام افعال ٹھیک سے کام نہ کریں تو انسان ڈپریشن کا بھی شکار ہو سکتا ہے۔ مڈبرین دماغ کا سب سے چھوٹا ایریا ہے۔

لمبک نظام Limbic System

لمبک نظام – لمبک نظام ہمارے “جذباتی دماغ” ، یا “بچگانہ دماغ” emotional brain”, or ‘childish brain کے طور پر جانا جاتا ہے۔ یہ سیریبرم کے اندر پایا جاتا ہے اور اس میں تھیلامس ، ہائپو تھیلامس ، امیگڈلا اور ہپو کیمپس ہوتا ہے۔

تھیلامس Thalamus 

تھیلامس کا بنیادی کردار دماغ کے ایک حصے سے اوپری دماغ تک حسی معلومات منتقل کرنا ہے۔

ہائپو تھیلامس Hypothalamus

ہائپو تھیلامس کا بنیادی کردار پیچوٹری گلینڈ اور اینڈوکرائن کی سرگرمیوں کو فعال کرنا ہے۔ اس کے علاوہ یہ جسم میں درجہ حرارت ، نیند اور بھوک کو بھی کنٹرول کرتا ہے۔

امیگڈلا Amygdala

ہمارے دماغ میں موجود (dimagh) امیگڈلا کا بنیادی کردار حواس کو پروسیس کرنا ہوتا ہے۔ ہپوکیمپس سے منسلک، امیگڈلا جذبات سے بھرپور یادیں تازہ رکھنے میں کردار ادا کرتا ہے۔ اس کے علاوہ اس میں افیون رسیپٹر سائٹس کی ایک بہت بڑی تعداد موجود ہوتی ہے۔ جو ہمارے غصے، خوف اور جنسی جذبات کی شدت میں کردار ادا کرتی ہے۔

ہپوکیمپس Hippocampus

ہپوکیمپس کا بنیادی کردار یاداشت کی تشکیل، اس کی تنظیم اور معلومات کا ذخیرہ کرنا ہے۔ یہ نئی یادوں کی تشکیل، جذبوں اور حواس (جیسے خوشبو اور آواز) کو یادوں سے جوڑنے میں خاص طور پر اہم کردار ادا کرتا ہے۔

پیچوٹری گلینڈ Pituitary Gland 

پیچوٹری گلینڈ، عصبی نظام اور اینڈو کرائن سسٹم کے مابین ایک اہم رابطہ ہے۔ ہمارے دماغ(Demagh) میں یہ انتہائی اہم گلینڈ ہے۔ کیونکہ یہ بہت سے ہارمون جاری کرتا ہے۔ جن کا اثر ہماری جسمانی نشوونما، میٹابولزم، جنسی افزائش اور تولیدی نظام پر پڑتا ہے۔ یہ ہائپو تھیلامس سے جڑا ہوا ہوتا ہے اور اس کا سائز مٹر کے ایک دانے کے برابر ہوتا ہے۔ یعنی انسانی قد یا مجموعی جسامت اور جنسی طاقت کا انحصار اس چھوٹے سے پیچوٹری گلینڈ کی کارکردگی پر منحصر ہوتا ہے۔

ہنڈبرین Hindbrain

دماغ کا سب سے نیچے والا حصہ ہنڈبرین کہلاتا ہے۔ دوسرے الفاظ میں اسے دماغ (Dmagh) کی جڑ بھی کہہ سکتے ہیں۔

سیری بلم The Cerebellum

سیری بلم – “چھوٹا دماغ”۔ اس کو چھوٹا دماغ اس لیے کہا جاتا ہے، کیونکہ اس کی شکل بڑے دماغ (Brain) سے ملتی جلتی ہوتی ہے۔ اس کا تعلق جسمانی نقل و حرکت، جسمانی توازن، کارڈیک اور سانس کے نظام کو ہم آہنگ اور ضابطے میں رکھنا ہوتا ہے۔

دماغی تنا Brain Stem 

دماغ (Damagh) کا تنا ایک لمبک نظام کے نیچے واقع ہے۔ یہ زندہ رہنے کے متعلق سب سے اہم کام جیسے سانس لینے، دل کی دھڑکن اور بلڈ پریشر کے لئے ذمہ دار ہے۔ دماغی تنا مڈبرین، پونس اور میڈولا سے بنا ہوتا ہے۔

پونس Pons

بشمول سیری بلم اور سیری برم (چھوٹا دماغ اور بڑا دماغ )، پونس کا بنیادی کردار اعصابی نظام کے مختلف حصوں کے درمیان ایک پل کے طور پر کام کرنا ہے۔ پونس میں سے بہت سے اہم اعصاب شروع ہوتے ہیں۔ جن میں ٹریجیمنل اعصاب بھی شامل ہیں۔ جو کہ چہرے میں محسوس کرنے کی حس کا کام کرتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ کاٹنے، چبانے اور نگلنے کے لئے استعمال ہونے والے اعصاب کو بھی قابو میں رکھتے ہیں۔ پونس میں ابڈوسینس اور ویسٹیبلوکوکلیئر اعصاب بھی ہوتے ہیں۔ جن میں سے پہلے والا ہمیں ایک دوسرے کی طرف دیکھنے اور دوسرے والا ہمیں سننے کی اجازت دیتا ہے۔ دماغ (Brain) کے تنے کا حصہ ہونے کے ناطے، پونس کا نچلا حصہ سانس لینے کی شدت کو بڑھاتا اور کم کرتا ہے۔ جبکہ اوپری پونس کا ایک حصہ سانسوں کی گہرائی اور تعداد کو کم کرتا ہے۔ پونس ہماری نیند کے سائکل کو بھی کنٹرول کرتا ہے۔ یہ ہمارے نظام تنفس اور مختلف طرح کے غیر ارادی ردعمل کو بھی قابو میں رکھتا ہے۔

میڈولا Medulla

میڈولا کا بنیادی کردار ہماری زندگی کو برقرار رکھنے والے کاموں کو از خود طور پردرست رکھنا ہوتا ہے۔ چاہے ہم سو رہے ہو یا جاگ رہے ہوں ہم توجہ کریں یا نہ کریں یہ خودبخد ہمارے سانس لینے ، نگلنے اور دل کی دھڑکنوں کی شرح کا تعین رکھتا یے۔ دماغی تنے کے ایک حصے کے طور پر، میڈولا ریڑھ کی ہڈی میں موجود عصبی تار (حرام مغضSpinal Cord) کے ذریعے سے دماغ اور نچلے جسم کے درمیان پیغام رسانی کا کام سر انجام دیتا ہے۔ یہ ریڑھ کی ہڈی کے دماغ (Brain) سے ملنے والی جگہ پر واقع ہوتا ہے۔